جمعرات , اگست 5 2021

بعیت کی اقسام

پہلی قسم کی بیعت:کسی کامل سے دست بیعت ہونے کے بعد فیض کاسلسلہ شروع ہوتا ہے ۔اس قسم میں صرف نسبت یا منسلک ہونے سے خاص فیض نہیں ہو تا یہ سلسلہ ہردور میں موجود ہوتا ہے لیکن اصل کا ملنا محال ہے ۔جیسا کہ ایک شخص کو قادری ولایت ملی اور وہ غوث یاقطب ہوا۔اس کی وفات کے بعد اس کالڑکا گدی نشین ہوا پھر اس کا لڑکا اور یہ سلسلہ اس طرح چلتا رہالیکن ضروری نہیں کہ باپ بھی غوث بیٹابھی غوث حتیٰ کہ ساری نسل غوث ہی ہو کیونکہ ولایت وراثت نہیں بلکہ خداداد ہے اور اس کامل کے خلفاء کی اولاد بھی نسل درنسل گدی نشین بن گئی ۔اب یہ سارے قادری بزرگ ہی کہلائیں گے ۔ ان میں کئی وردووظائف کے عامل اور کئی ظاہری عالم بھی ہوں گے لیکن خود کو فقیر کہلائیں گے جو کہ فقر کی بو سے بھی آشنا نہ ہوں گے ۔کوئی غوث اور کوئی قطبیت کے دعوے میں ہو گا پھر اصل کو ٹھکرائیں گے اور جھٹلائیں گے اس قسم کی ہزاروں گدیا ں اور ہزاروں غوث و قطب ہر شہر میں ہر وقت ملیں گے ۔
جبکہ ایک وقت میں ایک ہی غوث وتین قطب ہوتے ہیں ۔ان لوگوں سے بیعت ہو نا بے کار ہے ۔اس بیعت سے بہتر تھا کہ کسی ولی کی صحبت میں ایک لمحہ گزاردیتا۔شاید اصحاب کہف کیکتے کی طرح صرف صحبت سے ہی حضرت قطمیر بن جاتا۔
یک زمانہ صحبت بااولیاء
بہتر از صد سالہ طاعت بے ریا
دوسری قسم کی بیعت :سلسلہ اویسیہ کے کسی کامل سے ذاتی منسلک ہونے یا نسبت سے ہی فیض شروع ہو جاتا ہے لیکن یہ سلسلہ کبھی کبھی آتا ہے اس لئے اس کی شناخت بھی محال ہے ۔کامل چاہے اسے بیعت کرے یانہ کرے لیکن وہ اویسی بیعت میں آجاتا ہے اور طالب کہلاتا ہے ۔کامل کے ذمہ اور نظر میں اس وقت تک رہتا ہے جب تک کامل اس کا رخ کسی دوسری طرف نہ پھیر دے ۔
حضرت اویس قرنیؓ کو بھی بغیر دست بیعت کے حضور پاک ﷺسے فیض تھا۔حضرت ابو بکر حواری ؒ کو بھی حضرت ابوبکرؓ سے اویسی فیض تھا ۔ان سے باقاعدہ سلسلہ حواریہ چلا۔بایزید بسطامی ؒ کوبھی حضرت امام جعفر صادقؓ سے اویسی فیض تھا۔ان سے بھی سلسلہ بسطامی چلا۔سخی سلطان باھوؒ کو بھی حضور پاک ﷺسے اویسی فیض تھا ۔راہِ سلوک میں کچھ منازل پانے کے بعد آپ ؒ اپنی والدہ کے بے حد اصرار پر حضرت عبدالرحمن ؒ سے بیعت ہوئے جس کی آپ ؒ کو ضرورت نہ تھی ۔آپ ؒ لوگوں کو بھی بغیر دست بیعت کے فیض پہنچاتے اور نظروں سے مسلمان بناتے اور اللہ تک پہنچاتے ۔اگر کسی کوکسی کامل سے قلب اور سینے کا روحی فیض حاصل ہو جائے تووہ خودبخود اس کے سلسلہ میں پیوست او ولایت میں ضم ہو جاتاہے ۔

Check Also

اگر روح بیمار ہو تو قرآن پاک سے بہتر کوئی دوا نہیں

اگر روح بیمار ہو تو قرآن پاک سے بہتر کوئی دوا نہیں

جواب دیں